Sovereign Pakistan

Islam,News,Technology,Free tips and tricks,History,Islamic videos,Pakistan's prosperity, integrity,sovereignty,

Image result for Earn Online 728x90

Sunday, March 8, 2015

===== بھارت کا جنگی جنون۔۔۔ پاکستان پر جارحیت اور دھمکیاں =====


















گزشتہ ہفتے بھارت میں دفاعی بجٹ پیش کیا گیا۔ نریندر مودی حکومت نے اپنا پہلا بجٹ پیش کرتے ہوئے جدید لڑاکا طیارے، ٹینک اور بحری جنگی جہاز خریدنے کا اعلان کیا جبکہ 280ارب ڈالر کے مجموعی بجٹ میں دفاع کیلئے 4ارب ڈالر (تقریباً 41کھرب پاکستانی) مختص کر دیئے۔ گزشتہ سال کے مقابلے میں دفاعی بجٹ میں 4ارب ڈالر کا اضافہ کیا گیا ہے اس طرح مجموعی بجٹ کا 14فیصد دفاع پر خرچ ہو گا، دنیا میں فوجی سازوسامان کا سب سے بڑا خریدار بھارت آئندہ مالی سال کے دوران میں 126جنگی جہاز، 197ہلکے ہیلی کاپٹرز، 15اپاچی اور 22چینوک ہیلی کاپٹرز اور دیگر بمبار طیارے خریدے گا جبکہ چنئی کے جوہری پلانٹ میں دوسرا پلانٹ لگانے کی تجویز پیش کی گئی۔ بجٹ میں دولت ٹیکس ختم، کارپوریٹ سیکٹر پر محصولات میں کمی اور سروسز ٹیکس میں اضافہ کیا گیا جس سے بھارت میں خدمات مہنگی ہو جائیں گی۔ نئے بجٹ سے متوسط طبقے کی امیدیں دم توڑ گئیں۔ بجٹ پیش کرتے ہوئے وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے کہا کہ بھارتی سرزمین کے ایک ایک انچ کا دفاع اور تحفظ ہر چیز پر مقدم ہے۔
مودی سرکار کے آنے کے بعد بھارت کے اندر اقلیتوں خصوصاً مسلمانوں اور پھر عیسائیوں کے ساتھ ناروا سلوک کی خبروں میں اضافہ ہو گیا ہے۔ مسلمانوں کی حالت تو پہلے ہی انتہائی خراب تھی لیکن اب عیسائیوں کی شامت بھی آ گئی ہے۔ ان حالات میں اب بھارتی حکومت کے اپنے دفاعی بجٹ میں چار ارب ڈالر کا اضافہ اس کے کن مقاصد کی نشاندہی کرتا ہے۔ آخر اتنا خطیر اضافہ کیوں کیا گیا ہے؟ جب کہ بھارت کوئی ترقی یافتہ ملک نہیں جہاں ہر طرف خوشحالی پھیلی ہو، دودھ اور شہد کی نہریں بہتی ہوں، حال یہ ہے کہ صرف دارالحکومت دہلی میں لاکھوں لوگ غربت کی لکیر کے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ اپنا گھر نہ ہونے کے باعث ممبئی کے فٹ پاتھوں پر لوگوں کی ایک بڑی تعداد سوتی ہے۔ بھارت میں 35کروڑ لوگوں کے پاس بجلی سرے سے ہی نہیں، دنیا میں سب سے زیادہ غربت بھارت میں ہے۔ بے گھر کروڑوں میں ہیں، 60فیصد آبادی کے پاس بیت الخلاء جیسی بنیادی ترین سہولت بھی نہیں۔
دلچسپ بات یہ ہے کہ نریندر مودی بیت الخلاء بنانے اور بھارت کو صاف کرنے کا وعدہ اور اعلان کر کے اقتدار میں آیا لیکن اپنے ان پسے ہوئے لوگوں کی زندگی کو بہتر بنانے کے بجائے اس نے دفاعی بجٹ میں اضافہ کر دیا۔ دفاعی ماہرین کے مطابق بھارت کے دفاعی بجٹ میں یک لخت اتنا بڑا اضافہ چین اور پاکستان کا مقابلہ کرنے کے لئے کیا گیا ہے اور اس مقصد کے پس منظر میں امریکی عزائم کارفرما ہیں اور بھارت امریکہ کے ایما پر اس خطے میں خصوصی کردار ادا کرنے کی تمنا کو پروان چڑھا رہا ہے۔ بعض بھارتی تجزیہ نگاروں کے مطابق چین بھارت کے لئے ایک بڑا خطرہ بن چکا ہے اور وہ اسے چاروں اطراف سے گھیرنے کی نیت سے نیپال، میانمار اور سری لنکا میں جنگی تنصیبات قائم کر رہا ہے اور اپنے اس مقصد کی تکمیل کے لئے بنگلہ دیش کو بھی شامل کر سکتا ہے۔ لیکن پاکستان کے تجزیہ نگاروں کا خیال ہے کہ بھارت چین کا مقابلہ نہیں کر سکتا اس کے لئے اسے ایک طویل عرصہ درکار ہے اس کا فوری ہدف پاکستان ہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس نے پاکستان کے ساتھ مغربی سرحدوں پر بلااشتعال فائرنگ اور گولہ باری کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔ بھارتی فورسز نے ہفتے کے روز بھی سیالکوٹ کے سرحدی علاقوں پر بلااشتعال فائرنگ اور گولہ باری کی۔ امریکہ کو مستقبل میں اپنی بالادستی کے لئے سب سے زیادہ خطرہ چین سے محسوس ہو رہا ہے اور وہ ہر صورت اپنی بالادستی قائم رکھنے کے لئے کسی بھی حد تک جانے کو تیار ہے۔
اس مقصد کے لئے وہ بھارت کو مہرے کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔ بہتر ہوتا کہ بھارتی حکومت اتنی بڑی رقم اپنے جنگی جنون کی نذر کرنے کے بجائے اپنے عوام کی فلاح و بہبود پر خرچ کرتی، اس کا بجٹ خسارے کا شکار ہے اور اس کی ساری توجہ ہتھیاروں کے ڈھیر لگانے پر ہے۔ بھارتی حکومت کو یہ حقیقت نہیں بھولنی چاہئے کہ صرف ہتھیاروں کے انبار لگا لینے سے کوئی ملک بڑی قوت نہیں بن جاتا، اس کے لئے لازم ہے کہ وہ معاشی اور اقتصادی میدان میں بھی بھرپور ترقی کرے، اس کے عوام کو تعلیم اور صحت کی بنیادی سہولتیں میسر ہوں۔ روس کی مثال سب کے سامنے ہے کہ افغانستان میں ہونے والے جہاد نے اس کی معیشت پر اتنے گہرے اثرات مرتب کئے کہ اسے اپنا ملک سنبھالنا مشکل ہو گیا اور مختلف ریاستوں نے اپنی خودمختاری کا اعلان کر کے اس کی قوت کو کمزور ہی نہیں بلکہ اسے ٹکڑے ٹکڑے کر دیا۔
امریکہ کو بھی افغان جنگ کے دوران میں بہت زیادہ معاشی دباؤ کا سامنا کرنا پڑا لہٰذا اس نے عیاری سے کام لیتے ہوئے دیگر طاقتور اور خوشحال یورپی قوتوں کو اپنے ساتھ ملا لیا اس طرح جنگ کے اخراجات مختلف طاقتوں کے درمیان تقسیم ہو گئے۔ لیکن اس وقت امریکہ اور اس کے سارے اتحادی شدید معاشی بحران سے پھر دوچار ہیں جو سب کے سامنے ہے۔ دفاعی ماہرین کے مطابق امریکی معیشت کا بڑا انحصار اسلحہ ساز فیکٹریوں پر ہے اس لئے اپنی معیشت کو ترقی دینے کے لئے زیادہ سے زیادہ اسلحہ کی فروخت اس کی پالیسی کا حصہ ہے اور اس نے اس کیلئے بھارت کو ہدف بنایا ہوا ہے۔ بھارت کا یہ جنون اسے کبھی کامیاب نہیں بنا سکتا۔ اگر بھارت سمجھتا ہے کہ وہ اس طرح خطے کا تھانیدار اور سلامتی کونسل کا رکن بن جائے گا تو یہ اس کی بھول ہے۔
اسے بہرحال معاملات حل کرنا ہوں گے۔ پاکستان کو ڈرانے دھمکانے کی پالیسی نہ کبھی پہلے کامیاب ہوئی اور نہ آئندہ ہو گی۔ یہ درست ہے کہ ساری دنیا بھارت کے ساتھ ہے لیکن جب اس کے اپنے ظلم و غربت میں پسے عوام اور ظلم کا سامنا کرنے والے مسلمان اور دیگر اقوام اس کے خلاف کھل کر میدان میں آئیں گی تو اس کے لئے معاملات سنبھالنا آسان نہیں ہو گا۔ بھارت کو چاہیے کہ وہ سب سے پہلے کشمیر کا مسئلہ حل کرے جہاں اس کے سب سے زیادہ وسائل خرچ ہوتے ہیں۔ کشمیر کو اگر وہ چھوڑ دے اور پاکستان کو اس کا یہ جائز حق ادا کر دے تو اسے اتنے مسائل کا سامنا نہیں ہو گا۔

No comments:

Post a Comment

Need Your Precious Comments.

Fashion

Popular Posts

Beauty

Mission of Sovereign Pakistan

SP1947's Major Purpose is To Educate and Inform the People of Pakistan about Realty and Facts. Because its Our Right to Know What is Realty and Truth..So Come and Join Us and Share Sp1947.blogspot.com with your Friends Family and Others.
------------------------------------------------------------------------------------------------------------
Sp1947.blogspot.com is Providing Daily Urdu Columns, Urdu Articles, Urdu Editorials, Top Events, Investigative Reports, Corruption Stories in Pakistan from Top Pakistani Urdu News Newspapers Like Jang, Express, Nawaiwaqt, Khabrain.
------------------------------------------------------------------------------------------------------------
Sp1947.blogspot.com Has a Big Collection of Urdu Columns of Famous Pakistani Urdu Columnists Like Columns of Javed Chaudhry, Columns of Hamid Mir, Columns of Talat Hussain, Columns of Dr Abdul Qadeer Khan, Columns of Irfan Siddiqui, Columns of Orya Maqbool Jan, Columns of Abdullah Tariq Sohail, Columns of Hasan Nisar, Columns of Ansar Abbasi, Columns of Abbas Athar, Columns of Rauf Klasra and Other Pakistani Urdu Columns Writers on Burning Issues and Top Events in Recent Pakistani Politics at One Place.
------------------------------------------------------------------------------------------------------------
Disclaimer
===========
All columns, News, Special Reports, Corruption Stories Published on this Website is Owned and Copy Right by Respective Newspapers and Magazines, We are Publishing all Material Just for Awareness and Information Purpose.

Google+ Badge

Travel

Followers